افریقی ملک تنزانیہ میں ایک چھوٹے پیمانے پر کام کرنے والا کان کن دو تنزانائٹ پتھر بیچ کر راتوں رات کروڑ پتی بن گئے ہیں۔

یہ پتھر اب تک ملک میں ڈھونڈے جانے والے تنزانائٹ پتھروں میں حجم میں سب سے بڑے ہیں۔

سنینیو لائزر نے ان 15 کلو وزنی پتھروں کو ملک کی کان کنی کی وزارت کو بیچ کر 34 لاکھ ڈالر کمائے۔

لائزر 30 سے زائد بچوں کے باپ ہیں اور انھوں نے بی بی سی کو بتایا کہ ’کل ہم ایک بڑا جشن منائیں گے۔‘

یہ بھی پڑھیے

مستقبل کے کروڑ پتی بنانے والا کیمپ

14 بچوں کی کروڑ پتی ماں

کروڑ پتی بننے کے تین آسان نسخے

تنزانائٹ ایک ایسا پتھر ہے جو صرف شمالی تنزانیہ میں پایا جاتا ہے اور اس کی مدد سے زیور بنائے جاتے ہیں۔

یہ زمین پر پائے جانے والے سب سے زیادہ نایاب پتھروں میں سے ایک ہے اور ایک مقامی ماہر ارضیات کے اندازے کے مطابق اس پتھر کی سپلائی شاید اگلے 20 برس تک مکمل طور پر ختم ہو چکی ہے۔

اس قیمتی پتھر کی خاص بات اس کا مختلف رنگوں کا مجموعہ ہونا ہے جن میں سبز، جامنی، سرخ اور نیلا شامل ہیں۔

اس کی قیمت کا تخمینہ اس کے رنگوں کی صفائی سے لگایا جاتا ہے، جتنا واضح رنگ ہو گا پتھر کی قیمت اتنی زیادہ ہو گی۔

گذشتہ ہفتے لائزر نے یہ پتھر نکالے جن کے وزن بالترتیب نو اعشاریہ دو اور پانچ اعشاریہ آٹھ کلو تھے۔ تاہم انھوں نے یہ پتھر بدھ کے روزشمالی خطے منیارا میں ایک تقریب کے دوران بیچے۔

اب تک زمین سے نکالا جانے والا سب سے بڑا تنزانائٹ پتھر تین اعشاریہ تین کلو کا تھا۔

تنزانیہ کے صدر جان مگوفولی نے لائزر کو فون کیا اور انھیں اس حوالے سے مبارکباد دی۔

صدر کا کہنا تھا کہ ’یہ فائدہ ہے چھوٹے پیمانے پر کام کرنے والے کان کنوں کا اور اس سے ثابت ہوتا ہے کہ تنزانیہ خوشحال ہے۔‘

مگوفولی سنہ 2015 میں اقتدار میں آئے اور یہ وعدہ کیا کہ وہ کان کنی کے شعبے میں ملکی مفادات کا تحفظ کرنا چاہیں گے اور اس کے ذریعے حکومت کی آمدنی میں اضافہ کریں گے۔

کروڑ پتی لائزر کا کیا کہنا تھا؟

لائزر کی عمر 52 برس ہے اور انھوں نے چار شادیاں کر رکھی ہیں۔ انھوں نے بتایا کہ وہ ایک گائے کی قربانی دیں گے۔

وہ آنے والے دنوں میں منیارا کے سیمانجیرو ضلع میں سرمایہ کاری بھی کرنا چاہتے ہیں۔

’میں چاہتا ہوں کہ میں ایک شاپنگ مال اور ایک سکول بناؤں۔ میں یہ سکول اپنے گھر کے قریب بنانا چاہتا ہوں۔ یہاں بہت سارے غریب افراد ہیں جو اپنے بچوں کو سکول نہیں بھیج سکتے۔‘

ان کا مزید کہنا تھا کہ میں ’پڑھا لکھا تو نہیں ہوں لیکن میں چاہتا ہوں کہ چیزیں پیشہ وارانہ طور پر چلائی جائیں۔ اس لیے میں چاہوں گا کہ میرے بچے کاروبار کو پیشہ وارانہ طور پر چلائیں۔‘

انھوں نے کہا کہ اس غیرمعمولی واقعے کی وجہ سے ان کے رہن سہن میں کوئی فرق نہیں آئے گے۔ انھوں نے کہا کہ وہ اپنی دو ہزار گائے کی دیکھ بھال جاری رکھیں گے۔

انھوں نے کہا کہ وہ اچانک امیر ہونے کے باوجود احتیاطی تدابیر نہیں اپنانا چاہیں گے۔

'یہاں سکیورٹی پہلے ہی تسلی بخش ہے۔ اس لیے کوئی مسئلہ نہیں ہو گا۔ میں رات میں بھی کسی مسئلے کے بغیر چہل قدمی کر لیتا ہوں۔'

لائزر جیسے چھوٹے پیمانے پر کام کرنے والے کان کن حکومت سے تنزانائٹ کی کھوج کے لیے لائسنس لیتے ہیں تاہم بڑی کمپنیوں کی زیرِ انتظام کانوں کے قریب غیرقانونی کان کنی بھی ہوتی ہے۔

سنہ 2017 میں صدر مگوفولی نے فوج کو حکم دیا تھا کہ وہ منیارا میں میریلانی نامی کان کے گرد 24 کلو میٹر لمبی دیوار بنائیں کیونکہ یہ دنیا میں تنزانائٹ پتھر کی اکلوتی کان سمجھی جاتی ہے۔

دار السلام بی بی سی کے سیمی اوامی نے کے مطابق ایک برس بعد حکومت نے کان کنی کے شعبے سے آنے والی آمدن میں اضافے کی وجہ دیوار کی تعمیر ہے۔