لوگ اکثر شکایت کرتے ہیں کہ فیس بک کے برعکس سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر ایک ایسی سوشل میڈیا ایپ ہے جس کے فیچرز محدود رہتے ہیں۔ بعض صارفین اپنے احساسات اور خیالات کے اظہار کے لیے ٹوئٹر کی جانب سے طے شدہ حد سے خوش نہیں۔

جیسے ایک ٹویٹ میں صرف 280 حروف استعمال ہوسکتے ہیں۔ اور پہلے ان حروف کی تعداد صرف 140 ہوا کرتی تھی۔

اس لیے کسی بڑے لیڈر سے لے کر عام صارف تک سب کو اپنی بات کئی ٹویٹس میں توڑ کر کرنی پڑتی ہے۔

یہ بھی پڑھیے

زوم: ’بِن بلائے مہمانوں کا راستہ نئے ورژن میں روکا جائے گا‘

واٹس ایپ جاسوس ایران پر کیوں نظریں گاڑے ہوئے ہیں؟

انسٹاگرام پر ’فیک فالوورز‘ کیسے خریدے جا سکتے ہیں؟

پی ایس فائیو کی پہلی جھلک: 'ویڈیو گیمز کے مستقبل' سے آپ کیا توقع کر سکتے ہیں؟

اکثر صارفین یہ بھی بتاتے ہیں کہ ٹویٹ میں بات مختصر رکھنے کی وجہ سے وہ ایسی بات نہیں کہہ سکے جو وہ درحقیقت کہنا چاہتے تھے۔

لیکن اب اس سب کو مدنظر رکھتے ہوئے ٹوئٹر نے ایک نیا فیچر متعارف کرا دیا ہے۔

اسے استعمال کرتے ہوئے لوگ بغیر کچھ لکھے ٹویٹ شیئر کر سکیں گے۔ لیکن وہ کیسے؟ تو اس کا جواب یہ ہے کہ ٹوئٹر نے ایک وائس فیچر متعارف کرایا ہے جس میں صارفین اپنی آواز ریکارڈ کر سکتے ہیں۔

یعنی اب آپ اپنی آواز میں ٹویٹ شیئر کر سکتے ہیں۔ اس طرح صارفین کو کچھ لکھنا نہیں پڑے گا اور وہ آڈیو پیغام میں اپنے خیالات اور احساسات کا اظہار کر سکیں گے۔

اس کی خصوصیات کیا ہوں گی؟

آپ ایک وائس ٹویٹ یعنی بولتے ٹویٹ میں 140 سیکنڈز تک اپنی آواز ریکارڈ کر سکتے ہیں۔ لیکن اس کے باوجود اگر آپ کی بات مکمل نہیں ہوسکی تو ایپ خودبخود متعدد ٹویٹس بنا دے گی اور اسے تھریڈ کی شکل میں شیئر کیا جاسکے گا۔

جب آپ کی بات ختم ہوجائے تو آپ اس ٹویٹ کو بٹن دبا کر شیئر کر سکتے ہیں۔

لوگ آپ کی ٹویٹ اپنی ٹائم لائن پر بالکل اس طرح دیکھ سکیں گے جیسی کوئی عام ٹویٹ دیکھ پاتے ہیں۔

ٹوئٹر کے مطابق آواز والی ٹویٹ تاحال تجربے کے مراحل سے گزر رہی ہے اور یہ ابھی آئی فون پر مخصوص صارفین کے لیے دستیاب ہے۔

لیکن کمپنی کا کہنا ہے کہ آئندہ ہفتوں میں تمام آئی فون صارفین اس فیچر کو استعمال کر سکیں گے۔

کمپنی نے اس بارے میں کوئی معلومات فراہم نہیں کی کہ اینڈرائیڈ کے صارفین کب اور کیسے بولتے ٹویٹ کر سکیں گے۔